ہفتتہ اتوار کومارکیٹیں کھولنے کا حکم واپس،حکومت اقدمات کرے پریس کانفرنس نہیں،سپریم کورٹ

ہفتتہ اتوار کومارکیٹیں کھولنے کا حکم واپس،حکومت اقدمات کرے پریس کانفرنس نہیں،سپریم کورٹ
ہفتتہ اتوار کومارکیٹیں کھولنے کا حکم واپس،حکومت اقدمات کرے پریس کانفرنس نہیں،سپریم کورٹ

سپریم کورٹ نے ملک میں کورونا وائرس کے بڑھتے ہوئے کیسز کے پیش نظر ہفتے اور اتوار کو مارکیٹیں کھولنے کا حکم واپس لے لیا ہے۔

کورونا وائرس ازخود نوٹس کیس کی سپریم کورٹ میں چیف جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں 4 رکنی بینچ نے کی۔دوران سماعت چیف جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دیے کہ حکومت نے تاحال کورونا سے تحفظ کے لیے قانون سازی نہیں کی۔ جس پر اٹارنی جنرل نے کہا کہ صوبوں کی جانب سے قانون سازی کی گئی ہے۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ قومی سطح پر بھی کورونا سے تحفظ کے لیے کوئی قانون سازی ہونی چاہیے، قومی سطح پر قانون سازی کا اطلاق پورے ملک پر ہوگا۔

جسٹس گلزار احمد نے کہا کہ ملک کے تمام ادارےکام کر سکتے ہیں تو پارلیمنٹ کیوں نہیں کر سکتی؟جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ نہیں معلوم کورونا مریضوں کی تعداد کہاں جا کر رکے گی۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ پریس کانفرنسوں کے ذریعے لوگوں کی زندگیوں کا تحفظ نہیں ہوگا۔انھوں نے مزید کہا کہ کورونا وائرس کسی صوبے میں تفریق نہیں کرتا اور لوگوں کو مار رہا ہے، وفاقی حکومت کو اس معاملے پر لیڈ کرنا چاہیے، وفاقی حکومت کورونا سے بچاو¿ کیلئے قانون سازی کرے۔سپریم کورٹ نے وفاقی حکومت کو کورونا سے بچاو¿ کے لیے اقدامات کرنے کے احکامات جاری کرتے ہوئے کورونا ازخود نوٹس کی سماعت دو ہفتوں کے لیے ملتوی کر دی ہے۔

تبصرے