پولیو پر پہلے واویلا،اب خاموشی کیوں؟

In Pakistan Polio Cases Increas
پولیو پر پہلے واویلا،اب خاموشی کیوں؟

دنیا بھرمیں تقریبا اس پولیو مرض سے اپنی نسل کو پاک کرلیا ہے مگر پاکستان میں اور کچھ دیگر ممالک میں یہ مرض اب بھی موجود ہے۔حیرت کی بات یہ ہے پولیو پر لمبی لمبی کمپین چلانے والے اب مکمل خاموش کیوں ہیں؟

کورونا وائرس جس نے پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لے رکھا ہے۔چین کے شہر ووہان سے نکلنے والے اس وائرس نے متعدد موضوعات کو بند کردیا ہے اب بس بیماری ہے تو فقط کورونا ہے اور کچھ نہیں۔

ملکی ہسپتالوں میں دیکھ لیں او پی ڈیز بند ہیں علاج چل رہا ہے تو فقط کورونا کا۔۔گردے کا مریض کہاں جائے؟بخار کا مریض کہاں جائے؟دیگر مرض میں مبتلا مریض کہاں جائیں؟ان باتوں کا جواب حکومت کے پاس نہیں

کورونا کے آتے ہی ملک بھر میں پولیو انسداد مہم روک دی گئی سبھی کو کورونا کے لیئے مختص کردیا گیا۔کیا پولیو ختم ہوگیا تھا ؟نہیں ایسا نہیں ہے بلکہ ملک بھر پولیو کی لہر پھر سے شدت سے سر اٹھا رہی ہے۔

بلوچستان کی بات کریں بلوچستان میں پولیو کے مریض 24 فیصد ہوگئے ہیں جبکہ پنجاب میں پولیو کے اعداد و شمار 4فیصد ہوگئے ہیں

کراچی میں بھی پولیو کیسز تیزی سے بڑھ رہے ہیں۔ماہرین کا کہنا ہے پولیو تیزی سے پھیل رہا ہے مگر حکام بالا کی جانب سے کوئی اقدامات نہیں کیئے جارہے

حیرت اس بات کی ہے کہ پولیو جیسا مرض جسے 26 سال سے پاکستان سے ختم کرنے کے اقدامات کیئے جارہے ہیں اب مکمل طور پر اس معاملے پر خاموشی سادھ لی گئی ہے۔

ضرورت اس امر کی ہے کہ پولیو مرض کو ختم کرنے کے لیئے اقدامات کو یقینی بنانا ہوگا تا کہ اس ملک کی نسل کو معذوری سے بچایا جاسکے۔

تبصرے