اے پی سی ہونی چاہیے،اپوزیشن کا محاسبہ ہو،پہلے سیاسی جماعتیں ساتھ دیتی تو یہ حالت نہ ہوتی،مولانا فضل الرحمان

اے پی سی ہونی چاہیے،اپوزیشن کا محاسبہ ہو،پہلے سیاسی جماعتیں ساتھ دیتی تو یہ حالت نہ ہوتی،مولانا فضل الرحمان
اے پی سی ہونی چاہیے،اپوزیشن کا محاسبہ ہو،پہلے سیاسی جماعتیں ساتھ دیتی تو یہ حالت نہ ہوتی،مولانا فضل الرحمان

جے یو ئی آئی ف کے کے امیر مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ پورے ملک میں اس وقت معاشی بحران ہے۔اور حکومت اپوزیشن کے پیچھے ہے۔

تفصیلات کے مطابق مظفرگڑھ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے جے یو آئی ف کے امیر مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ ملک میں معاشی بحران ہے سب کے پیچھے نیب اور ایف آئی اے کو لگا دیا گیا ہے

انکا کہنا تھا کہ بی آر ٹی منصوبہ جو کہ 30 ارب سے 120 ارب تک چلا گیا اس پر کوئی حساب لینے والا نہیں ہے

مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ ملک میں صدارتی نظام اور ڈکٹیٹر شپ نہیں چل سکتی اگر یہ سب ہوا تو پھر صحافت فروغ نہیں پا سکتی۔

انکا مزید کہنا تھا کہ اگر میرے دھرنے میں تمام اپوزیشن جماعتیں اکھٹا ہوجاتی تو آج نتائج کچھ اور ہوتے

تبصرے