رواں ہفتے کیا کچھ مہنگا ہوا اور کتنا مہنگا ہوا؟جانیئے۔۔

رواں ہفتے کیا کچھ مہنگا ہوا اور کتنا مہنگا ہوا؟جانیئے۔۔
رواں ہفتے کیا کچھ مہنگا ہوا اور کتنا مہنگا ہوا؟جانیئے۔۔

پاکستان تحریک انصاف کی حکومت میں مہنگائی پر قابو پانا گویا ایک نا ممکنات میں سے ہوگیا ہے۔کابینہ اجلاس میں بھی وزرا مہنگائی پر اپنی ہی حکومت پر برس پڑتے ہیں

تفصیلات کے مطابق مہنگائی کی ماری عوام پر مہنگائی کے بم گرتے ہی چلے جارہے ہیں۔مارکیٹس میں قیمتوں کو مستحکم کرنے کی کوشش حکومت سے نہیں ہو پارہی۔انتظامیہ اشیاء خوردونوش کی چیزوں کی قیمتوں کا تعین کرتی ہے مگر عوام کو ان قیمتوں پر اشیاء میسر نہیں ہوتی۔

رواں ہفتے ملک میں جو اشیاء مہنگی ہوئی ان میں ٹماٹر کی قیمت میں ایک نہیں دو نہیں بلکہ پورے اٹھارہ روپے کا اضافہ ہوا ہے۔اس کے ساتھ ساتھ پیا ز کی قیمت میں بھی دس روپے کا اضافہ ہوگیا ہے۔ادارہ شماریات نے جو رپورٹ جاری کی ہے اس کے مطابق چکن پسند کرنے والوں کے لیئے بھی کوئی اچھی خبر نہیں ہے۔جی ہاں! چکن کی قیمت میں بھی آٹھ روپے اور چوہتر پیسے کا اضافہ کردیا گیا ہے۔

سردیاں ابھی آئی نہیں مگر انڈوں کی قیمتیں بھی بلندی کو چھونے لگی ہیں۔ادارہ شماریات کے مطابق انڈوں کی قیمت میں 15روپے کا اضافہ ہوگیا ہے۔

روز مرہ اشیاء کی قیمتوں میں ہر روز سے شہری پریشان ہوگئے ہیں۔بڑھتی مہنگائی کی وجہ سے شہریوں نے حکومت کو بھی خوب آڑے ہاتھوں لیا ہے۔

اردو ٹرینڈز نے مہنگائی کی روک تھام سے متعلق حکومتی اقدامات پر جب سوال کیا تو شہریوں میں کافی غم وغصہ پایا گیا۔شہریوں نے کہا کہ موجود ہ حکومت نے انکی مشکلات میں اضافہ کردیا ہے۔شہریوں نے کہا کہ عمران خان سے بہت امیدیں وابستہ تھیں مگر غریب عوام کو ریلیف نہ دینے کی وجہ سے اب عمران خان کی حکومت پر ان پر سے اعتماد اٹھ رہا ہے

روز مرہ اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں اگر کمی نہ کی گئی یا پھر منافع خور مافیا کے گرد حکومت نے گھیرا تنگ نہ کیا تو عوام کی یہ پریشانی حکومت کو آئندہ الیکشن میں کافی مہنگی پڑ سکتی ہے۔

تبصرے