انڈیا کے آٹھ امیر ترین بھکاری

انڈیا کے آٹھ امیر ترین بھکاری جو دیکھتے ہی دیکھتے مالامال ہو گئے
انڈیا کے آٹھ امیر ترین بھکاری جو دیکھتے ہی دیکھتے مالامال ہو گئے

ہندوستانی مردم شماری کے ذریعہ جمع کردہ آخری اعدادو شمار کے مطابق انڈیا میں چار لاکھ سے زاہد بھکاری ہیں انہیں میں سے چند ایک نے بھیگ مانگنے کو ہی پیشہ بنا لیا اور پھر اس بھکاری کے پیشے سے مالا مال ہوگئے۔
ان امیر ترین بھکاریوں کی تفصیلات ذیل میں پڑھئیے

بھارت جین

امیر ترین بھکاریوں میں پہلا نام بھارت جین کا ہے جس کا تعلق ہندوستان کے شہرممبئی سے ہے۔ان کا ماننا ہے کہ وہ ہندوستان کے پہلے امیر ترین بھکاری ہیں اور ماہانہ 164,000 روپے کماتے ہیں۔اطلاعات کے مطابق بھارت جین کے پاس ستر لاکھ کی مالیت کے دو آپارٹمنٹ بھی ہیں۔

سروتیہ دیوی

امیر ترین بھکاریوں میں دوسرے نمبر پرسروتیہ دیوی ہیں جن کا تعلق پٹنہ سے ہے اور ماہانہ ایک لاکھ دس ہزار روپے کماتی ہیں۔ اس کے علاوہ وہ 75000روپے کی سالانہ انشورنس بھی ادا کرتی ہیں۔

سمبھاجی کیل

انڈین میڈیا کے مطابق اِن کو اکثر ممبئی میں بھیگ مانگتے دیکھا گیا ہے۔پیشہ وارانہ طور پر بھیگ مانگنے کے علاوہ،کیل سولاپور میں کچھ رئیل اسٹیٹ کمپنیوں کے مالک ہیں۔اس کے علاوہ کیل کا بینک بیلنس قریب ایک لاکھ ہے۔


کرشنا کمار

ہندوستان کے امیرترین بھکاریو ں کی لسٹ میں چوتھا نمبر کرشنا کمار کا ہے جس کو اکثر ممبئی میں ہی بھیگ مانگتے دیکھا گیا ہے۔کرشنا کے پاس گیارہ لاکھ کی مالیت کا آپارنمنٹ بھی موجود ہے۔کرشنا اپنے بھیگ مانگنے کے فن سے تقریباََ ایک دن میں تین ہزار کمالیتا ہے۔

لکشمی داس

امیر ترین بھکاریوں میں پانچواں نمبر لکشمی داس کا ہے جس کا تعلق کلکتہ سے ہے۔ انڈیا میڈیا رپورٹز کے مطابق لکشمی داس نے 16سال کی عمر سے ہی بھیگ مانگنا شروع کر دیا تھا۔ لکشمی تقریباََ 65000روپے ماہانہ کما لیتی ہیں۔

مسو

امیر ترین بھکاریوں کی فہرست میں چھٹا نمبر مسو کا ہے جو کہ شام 8بجے سے بھیگ مانگناشروع کرتا ہے اور صبح کے وقت واپس آ جاتا ہے۔مسو دن میں دو سے تین ہزار روپے کما لیتا ہے اور اس کے پاس دو فلیٹ ہیں جن میں سے ایک ممبئی میں واقع اندھیری ایسٹ اور دوسرا اندھیری ویسٹ میں موجود ہے۔


پپوکمار

انڈین میڈیا رپورٹز کے مطابق کمار کے پاس ایک کڑور کی مالیت کے آثاثے موجود ہیں۔پپو کی ٹانگ ٹوٹ جانے کے بعد پپو نے بھیگ مانگنا شروع کیا۔ اس کو اکثر پٹنہ کے ریلور سٹیشن پر بھیگ مانگتے دیکھا گیا ہے۔


چندر آزاد

امیر ترین بھکاریوں میں چندر آزاد آٹھویں نمبر پر شمار کیا جاتا ہے۔ رپورٹز کے مطابق چندر کے پاس بینک میں دس لاکھ اور نقد دو لاکھ موجود تھے۔ممبئی پولیس کو اس کے آثا ثوں کا تب معلوم ہوا جب چندر ریلوے ٹریک کو کراس کرتے ہوئے اپنی جان کی بازی ہار گیا۔

تبصرے