وحید مراد کی کو مداحوں سے بچھڑے 37برس گزر گئے۔۔

وحید مراد کی کو مداحوں سے بچھڑے 37برس گزر گئے۔۔
وحید مراد کی کو مداحوں سے بچھڑے 37برس گزر گئے۔۔

وحید مراد نے 2 اکتوبر 1938 کو فلم ساز نثار مراد کے گھر آنکھ کھولی، کراچی یونیورسٹی سے انگریزی ادب میں ایم اے یافتہ وحید مراد نے کریئر کی شروعات 1962میں بننے والی فلم اولاد سے کیا تھا۔

بحیثیت ہیرو وحید مراد کی پہلی فلم ہیرا اور پتھر تھی۔ سلور اسکرین پر 75 ہفتے مسلسل چلنے والی فلم ارمان نے وحید مراد کو عروج پر پہنچایا اور وہ پاکستانی فلم انڈسٹری کے پہلے باقاعدہ سپر اسٹار کہلائے۔ وہ برصغیر میں دلیپ کمار کے بعد واحد ہیرو تھے جن کے بالوں کے اسٹائل اور ملبوسات کی نقل کی گئی۔

وحید مراد کو پاکستان کی پہلی پلاٹینیم جوبلی فلم ارمان کا فلم ساز، مصنف اور ہیرو ہونے کا اعزاز حاصل ہے۔ یہ فلم 1965 میں ریلیز ہوئی اور پاکستان کی پہلی پلاٹینیم جوبلی فلم ہونے کا اعزاز حاصل کیا۔

وحید مراد کی وفات کے 27 سال کے بعد نومبر 2010 میں حکومت پاکستان نے انہیں ستارہ امتیاز سے نوازا۔

تبصرے