آرمی پبلک اسکول پر حملے کو چھ سال ہوگئے،مگر غم اب بھی تازہ

آرمی پبلک اسکول پر حملے کو چھ سال ہوگئے،مگر غم اب بھی تازہ
آرمی پبلک اسکول پر حملے کو چھ سال ہوگئے،مگر غم اب بھی تازہ

پشاور میں موجود آرمی پبلک اسکول میں ہونے والے سانحے کو چھ سال بیت گئے مگر بچوں کے والدین آج بھی انصاف کے منتظر ہیں۔

ملک پاکستان کی تاریخ میں سولہ دسمبر کی تاریخ ہمیشہ ایک المناک صدمے کے طورپر یاد رہتی ہے جس میں ایک تاریخ وہ ہے جب پاکستان دو حصوں میں تقسیم کردیا گیا۔یہ وہی تاریخ ہے جب پاکستان کے مشرقی حصے کو پاکستان سے جدا کردیا گیایہ تاریخ ہی اس ملک کے باسیوں کے لیئے رنج دینے والی کافی تھی مگر 2014میں دشمن نے منافقت کی چادر اوڑھے پھر اک ایسا وار کیا جسے بھلانا یقینا ناممکنات میں سے ہے۔

سانحہ اے پی ایس کو چھ سال ہوگئے بچوں کے والدین اپنے بچوں کے قاتلین کو ڈھونڈ رہے ہیں انصاف کی دہائی دے رہیں ہیں مگر مذمتی بیان سے نکل کر ان قاتلین پر کوئی گرفت کرنے والا نہیں۔

افوا ج پاکستان نے ضرب عضب کیا ان کٹھ پتلیوں کا جینا سر زمین پاکستان پر حرام کردیا جو دشمن کے ہاتھوں کا آلہ کار بنے اور معصوم کلیوں کو پروان چڑھنے سے پہلے ہی مرجھا دیا ۔

تبصرے