امریکی ریاست نے اس مچھلی کو مارنے کا حکم کیوں دیا؟

امریکی ریاست نے اس مچھلی کو مارنے کا حکم کیوں دیا؟
امریکی ریاست نے اس مچھلی کو مارنے کا حکم کیوں دیا؟

تصویر میں نظر آنے والی یہ مچھلی کوئی معمولی مچھلی نہیں ہے اسے خوفناک مچھلی تصور کیا جاتا ہے جس سے متعلق ایک اہم فیصلہ بھی جاری کردیا گیا ہے۔

عمومی طور پر اس مچھلی کو ایک نام دیا گیا ہے جسکا نام ہے سنیک ہیڈ فش،یہ مچھلی سانپ کی شکل کی ہے جس بنا پر اسے یہ نام دیا گیا ہے اس مچھلی کو حال ہی امریکی ریاست نے ماردینے کا حکم دیا ہے۔یا درہے کہ امریکہ کی پندرہ ریاستوں نے اس مچھلی کو ماردینے کا حکم دے دیا ہے۔

سنیک ہیڈ فش کا شمار ان مچھلیوں میںہوتا ہے جوپانی سے باہر بھی سانس لیں سکتی ہیں یہی وجہ ہے کہ مچھلی ایک نہر سے دوسری نہر با آسانی جاسکتی ہے ۔

ماہرین کے مطابق اس مچھلی کو بھوک ایسی ہوتی ہے جو کبھی ختم نہیں ہوتی یہی وجہ ہے اس مچھلی کے سامنے جو کچھ بھی سامنے آئے تو ہڑپ کر جاتی ہے جس کی بنا پر اسے جہاں دیکھے وہاں مارنے کا حکم دے دیا گیا ہے۔

سنیک ہیڈ مادہ مچھلی ایک سال میں دس ہزارہ انڈے دیتی ہے۔

تبصرے