شوق کے پیچھے نوکری چھوڑ دینے والے پالے خان کی باتیں پڑھیئے

شوق کے پیچھے نوکری چھوڑ دینے والے پالے خان کی باتیں پڑھیئے
شوق کے پیچھے نوکری چھوڑ دینے والے پالے خان کی باتیں پڑھیئے

پشاور کے ایک رہائشی کا شوق ہی اب اس کی آمدنی کا ذریعہ بن گیا ہے اور اس نے شوق کی تکمیل کے لیے نوکری چھوڑ دی۔

پشاور سے تعلق رکھنے والے ساجد مسعود خٹک عرف پالے خان کہتے ہیں کہ مجھے اصیل مرغے پالنے کا شوق ہے اور اسی شوق کی وجہ سے لوگ مجھے لوکل اور بین الاقوامی سطح پر  پالے خان کے نام سے جانتے ہیں۔

پالے خان نے کہا کہ یہ شوق والدہ کی طرف سے ملا ہے، وہ دیسی مرغ پالتی تھیں میں اصیل کی طرف آگیا ہوں دیسی مرغ حلالے کے لیے جبکہ اصیل شوق کے لیے پالے جاتے ہیں۔

 پالے خان نے کہا کہ مغل دور سے پہلے چنگیز خان کے دور میں یہ مرغ پالے جاتے تھے سپہ سالا کو جوش دلانے کے لیے ان کو لڑایا جاتا تھا لیکن میرا شوق ان کی نسل بڑھانا ہے۔

تبصرے