سرکار کن قبضہ مافیا کے خلاف متحرک ہوتی ہے؟زمینی قبضہ مافیا کیسے کام کرتا ہے؟

Land Mafia in Pakistan Articles
پاکستان میں سرکاری و نجی زمینوں پر قبضہ

پاکستان میں شاید ہی کوئی ایسا ہو جس کے لیئے لفظ قبضہ مافیا اجنبی سا ہو ،اس لفظ سے آشنائی نہ ہو سبھی اس لفظ سے متعلق خوب جانتے ہیں اور پھر ملک میں موجودہ حکومت پاکستان تحریک انصاف کی ہے اور وزیر اعظم ہیں عمران خان جو تقریبا اپنی ہر تقریر میں کسی نہ کسی مافیا کو موضوع بناتے ہیں یا پھر اس لفظ کی تکرار کرتے نظر آتے ہیں ویسے تو ملک میں مافیا کی متعدد اقسام ہیں جن میں منافع خور مافیا،چینی و آٹا چور مافیا ،ادویات مہنگی کرنے والا مافیا یا دیگر یہ سبھی اس تحریر کا موضوع نہیں ہیں فی الحال جس پر لکھنا مقصود ہے وہ ہے زمینی قبضہ مافیا

زمینوں پر قبضے کئیں طریقوں سے کیئے جاتے ہیں اور یہ مافیا بھی مختلف حربے استعمال کرتا ہے۔عموما سرکاری اراضی پر کوئی سیاست پشت پناہی لیکر سرکار کی زمین پر براجمان ہوجاتا ہے یا پھر کوئی طاقت ور کمپنی،ایک طریقہ اس مافیا کا یہ ہوتا ہے کسی فرد کی زمین پر کوئی طاقت ور اپنا قبضہ طاقت کے بل بوتے پر کر لیتا ہے اور کمزور شخص کی زمین ہتھیا لیتا ہے اور تیسری قسم ایسے افراد یا کمپنیز کی ہے جو بہت زیادہ لوگوں کی زمین ہتھیا رہے ہیں اور ان افراد یا کمپنیز کا طریقہ یہ ہوتا ہے یہ لوگوں کی زمینیں ہائوسنگ سوسائٹیز کے نام پر ہتھیا تے ہیں۔

نجی ہائوسنگ سوسائٹیز کے نام پر کوئی کام شروع کیا جاتا ہے پھر وہاں کی زمین کے غریب مالکان کو ڈرا دھمکا کر ایک معمولی رقم دے دی جاتی ہے اور یونہی یہ مافیا اپنا پراجیکٹ چلاتا ہے اور پھر مہنگے داموں زمینیں بیچ کر منافع خود اپنی جیب میں ڈال کر جیب بھاری کرتا ہے ۔

کن زمینی قبضہ مافیا کے خلاف کارروائی ہوتی نظر آتی ہے؟یہ ایک انتہائی اہم ترین سوال ہے پاکستان میں جن زمینی مافیا کے خلاف ہمیں کارروائی ہوتی نظر آتی ہے وہ مافیا فقط وہ ہے جو سرکاری زمینوں پر قابض ہے ان سے سرکا ر اپنی طاقت کے ذریعے زمین اپنی واپس لے لیتی ہے مگر دوسری جانب ایسے افراد جو کمزور ہیں اور انکی اراضی کسی طاقت ور نے ہتھیا لی ہے ایسے افراد کے کیسز سول تنازعات میں آجاتے ہیں اور ایسے افراد کو اپنی درخواست لیکر سیشن جج کے پاس جانا ہوتا ہے جس پر سیشن جج درخواست کا جائزہ لیکر پولیس کو مزید انکوائری کا حکم دیتا ہے ۔

ملک پاکستان میں کیسز نسل در نسل چلتے رہتے ہیں اورشنوائی اگر اس دوران کسی کی ہوجائے تو غنیمت ورنہ ایک کمزور اپنی ہی اراضی کے حصول کی تگ و دو میں اس دنیا سے دوسری دنیا چل نکلتا ہے مگر اسکو اس کا حق نہیں ملتا ۔

تبصرے